"آنکھ" کے نسخوں کے درمیان فرق

Jump to navigation Jump to search
3,824 بائٹ کا اضافہ ،  8 سال پہلے
م
معمولی ترمیم؛
م (←‏روزمرہ جات: معمولی ترمیم؛)
م (معمولی ترمیم؛)
! جمع غیر ندائی
| آنْکھوں {آں + کھوں(و مجہول)}
|-
! colspan="2" style="background:#aaa; padding:0; margin:0;" |
|-
! colspan="2" | تراجم
|-
! عربی
| عین
|-
! فارسی
| چشم
|-
! سنسکرت
| آکش
|-
! انگریزی
| آئی (eye)
|}
 
'''آنْکھ''' — {آنْکھ (ن مغنونہ)} (سنسکرت)
 
آکش آنْکھ
 
سنسکرت زبان کے لفظ آکش سے ماخوذ ہے قدیم زمانے میں آنکہ اور آنک بھی استعمال ہوتا رہا لیکن آنکھ ہی رائج ہوا سب سے پہلے 1503ء میں "نوسرہار" میں مستعمل ملتا ہے۔
 
==معانی==
{| class="wikitable"
{ اولا } وہ عضو جس سے دیکھتے ہیں، آلہ بصارت۔
!
 
! scope="column" | معانی
؎ کہیں کس سے کہ ہیں تعبیر اک خواب مسرت کی
! scope="column" style="width:40%;" | استعمال
 
|-
یہ آنکھیں اشک ریز اپنی یہ دامن خونچکاں اپنا [1]
! scope="row" valign="top" style="background:#1569C7;" | 1
 
| valign="top" | <span style="background:#1569C7;padding:1px 4px; color:#fff;">اولا</span> — وہ [[عضو]] جس سے دیکھتے ہیں، آلہ [[بصارت]]۔
2. { مجازا } دیکھنے کی قوت، بصارت، نگاہ، نظر، بینائی چشم۔
| valign="top" | {{شعر
 
| کہیں کس سے کہ ہیں تعبیر اک خواب مسرت کی
؎ دل چرایا ہے وہ اب آنکھ ملائیں کیونکر
| یہ آنکھیں اشک ریز اپنی یہ دامن خونچکاں اپنا }} {{حوالہ
 
| نام=r1 | عنوان=ضیائے سخن |تاریخ =1921ء |صفحہ=64 }}
سامنے ہوتی ہے مشکل سے گنہگار کی آنکھ [2]
|-
 
! scope="row" valign="top" style="background: #E3E4FA;" rowspan="2" | 2
دیکھنے کی صلاحیت۔
| valign="top" | <span style="background:#E3E4FA; padding:1px 4px;">مجازا</span> — دیکھنے کی قوت، بصارت، نگاہ، نظر، بینائی چشم۔
 
| valign="top" | {{شعر
"حاکم کے آنکھ نہیں ہوتی کان ہوتے ہیں۔" [3]
| دل چرایا ہے وہ اب آنکھ ملائیں کیونکر
 
| سامنے ہوتی ہے مشکل سے گنہگار کی آنکھ }} {{حوالہ
3. دیکھنے کا انداز(جس سے دل کا حال معلوم ہو جائے)، تیور۔
| نام=r2 | عنوان=گلزار داغ |تاریخ =1878ء |صفحہ=184 }}
 
|-
؎ دبدبہ بھی ہے وہی طرز سخن بھی ہے وہی
| valign="top" | دیکھنے کی صلاحیت۔
 
| valign="top" | "حاکم کے آنکھ نہیں ہوتی کان ہوتے ہیں۔" {{حوالہ
آنکھ بھی ہے وہی ابرو کی شکن بھی ہے وہی [4]
| نام=r3 | عنوان= فرہنگ آصفیہ |تاریخ =1895ء |صفحہ=253:1 }}
 
|-
4. مشاہدہ، دیکھنے کا عمل۔
! scope="row" valign="top" | 3
 
| valign="top" | دیکھنے کا انداز(جس سے دل کا حال معلوم ہو جائے)، تیور۔
؎ سنی سنائی پہ ایقان واہ کیا کہنا
| valign="top" | {{شعر
 
| دبدبہ بھی ہے وہی طرز سخن بھی ہے وہی
بغیر آنکھ کے عینی گواہ کیا کہنا [5]
| آنکھ بھی ہے وہی ابرو کی شکن بھی ہے وہی }} {{حوالہ
 
| نام=r4 | عنوان=مراثی نسیم |تاریخ =1963ء |صفحہ=11:3 }}
5. توجہ، رجحان، نظر التفات، نگاہِ رغبت۔
|-
 
! scope="row" valign="top" | 4
؎ صاحب کی آنکھ اب جو عروس اجل پہ ہے
| valign="top" | مشاہدہ، دیکھنے کا عمل۔
 
| valign="top" | {{شعر
اپنی بھی آنکھ خالق عز و جل پہ ہے [6]
| سنی سنائی پہ ایقان واہ کیا کہنا
 
| بغیر آنکھ کے عینی گواہ کیا کہنا }} {{حوالہ
6. مروت، لحاظ، پاس۔
| نام=r5 | عنوان=اختر (سجاد علی خاں)، مسدس |تاریخ =1956ء |صفحہ=8 }}
 
|-
؎ دم توڑتی ہوں پیاس سے تم پر اثر نہیں
! scope="row" valign="top" | 5
 
| valign="top" | توجہ، رجحان، نظر التفات، نگاہِ رغبت۔
کل تک جو تھی وہ آنکھ نہیں وہ نظر نہیں [7]
| valign="top" | {{شعر
 
| صاحب کی آنکھ اب جو عروس اجل پہ ہے
7. تمیز، شناخت، امتیاز، اٹکل، پرکھ۔
| اپنی بھی آنکھ خالق عز و جل پہ ہے }} {{حوالہ
 
| نام=r6 | عنوان=جاوید (سید محمد کاظم)، مرثیہ |تاریخ =1925ء |صفحہ=11 }}
"اس کے خاوند کو جواہرات کی آنکھ تھی۔" [8]
|-
 
! scope="row" valign="top" | 6
8. بصیرت، چشم معرفت، بالغ نظری، عقل، سمجھ۔
| valign="top" | مروت، لحاظ، پاس۔
 
| valign="top" | {{شعر
"میں دعا دیتا ہوں کہ خدا پٹنہ والوں کو سمجھ اور آنکھ دے۔" [9]
| دم توڑتی ہوں پیاس سے تم پر اثر نہیں
 
| کل تک جو تھی وہ آنکھ نہیں وہ نظر نہیں }} {{حوالہ
9. اشارہ، ایما۔
| نام=r7 | عنوان=منظور رائے پوری، مرثیہ |تاریخ =1965ء |صفحہ=7 }}
 
|-
؎ صحبت کا رقیبوں کی ہے ادنٰی یہ کرشمہ
! scope="row" valign="top" | 7
 
| valign="top" | تمیز، شناخت، امتیاز، اٹکل، پرکھ۔
جو آنکھ سے فرماتے ہیں وہ دل میں نہیں ہے [10]
| valign="top" | "اس کے خاوند کو جواہرات کی آنکھ تھی۔" {{حوالہ
 
| نام=r8 | عنوان=افسانچے، کیفی |تاریخ =1944ء |صفحہ=136 }}
10. مہارت، مشق، دخل۔
|-
 
! scope="row" valign="top" | 8
؎ ہشیار اسیر آنکھ ہے تجکو جو سخن میں
| valign="top" | بصیرت، چشم معرفت، بالغ نظری، عقل، سمجھ۔
 
| valign="top" | "میں دعا دیتا ہوں کہ خدا پٹنہ والوں کو سمجھ اور آنکھ دے۔" {{حوالہ
رکھتے ہیں وہ سر پر میرے دیوان کو ادب سے [11]
| نام=r9 | عنوان=مکتوبات شاد عظیم آبادی |تاریخ =مکتوبات شاد عظیم آبادی |صفحہ=191 }}
 
|-
11. امید، توقع، آسرا۔
! scope="row" valign="top" | 9
 
| valign="top" | اشارہ، ایما۔
امیر اللغات، 210:1
| valign="top" | {{شعر
 
| صحبت کا رقیبوں کی ہے ادنٰی یہ کرشمہ
12. گنے، بانس یا کسی اور پودے کی وہ جگہ جہاں سے شاخ پھوٹتی ہے، (بیشتر) گرہ۔
| جو آنکھ سے فرماتے ہیں وہ دل میں نہیں ہے }} {{حوالہ
 
| نام=r10 | عنوان=غزل کوکب، ماہنامہ، مسافر، مراد آباد، جنوری |تاریخ =1936ء |صفحہ=27 }}
"قلم جب بناویں تو نیچے کی جانب اور اوپر کے حصّے کی جانب قریب قریب آنکھ چھوڑ دینی چاہیے۔" [12]
|-
 
! scope="row" valign="top" | 10
شریفے کی پوست کا حلقے دار ابھار؛ انناس وغیرہ کے حلقے (ماخوذ : جامع اللغات، 61:1)
| valign="top" | مہارت، مشق، دخل۔
 
| valign="top" | {{شعر
کریلے کے اندر کا وہ پوست جس میں بیج لپٹا ہوتا ہے، جیسے کریلے کو چھیل کاٹ کر اور اس کی آنکھوں میں سے بیج نکال کر نمک ملو اور کچھ دیر ہوا میں رکھ دو۔
| ہشیار اسیر آنکھ ہے تجکو جو سخن میں
 
| رکھتے ہیں وہ سر پر میرے دیوان کو ادب سے }} {{حوالہ
لہسن کا جوا، جیسے : بڑی آنکھ کا لہسن چھانٹ کر لانا۔
| نام=r11 | عنوان=مسیو، امیراللغات |تاریخ =1881ء |صفحہ=210:1 }}
 
|-
13. تخمینہ، اندازہ
! scope="row" valign="top" | 11
 
| valign="top" | امید، توقع، آسرا۔
؎ لیا نہ دل مرا اک بوسے پر وہ یوں بولا
| valign="top" | امیر اللغات، 210:1
 
|-
ہماری آنکھ میں اتنے کا تو یہ مال نہیں [13]
! scope="row" valign="top" rowspan="4" | 12
 
| valign="top" | گنے، بانس یا کسی اور پودے کی وہ جگہ جہاں سے شاخ پھوٹتی ہے، (بیشتر) گرہ۔
14. اولاد، بیٹا بیٹی وغیرہ۔
| valign="top" | "قلم جب بناویں تو نیچے کی جانب اور اوپر کے حصّے کی جانب قریب قریب آنکھ چھوڑ دینی چاہیے۔" {{حوالہ
 
| نام=r12 | عنوان=باغبان |تاریخ =1903ء |صفحہ=19 }}
"مجھے دونوں آنکھیں برابر ہیں جو بڑی کو دوں گی وہی چھوٹی کو دوں گی۔" [14]
|-
 
| valign="top" | شریفے کی پوست کا حلقے دار ابھار؛ انناس وغیرہ کے حلقے
15. گھٹنے کے دونوں طرف کا گھڑا۔
| valign="top" | (ماخوذ : جامع اللغات، 61:1)
 
|-
(امیر اللغات، 21:1)
| valign="top" | کریلے کے اندر کا وہ پوست جس میں بیج لپٹا ہوتا ہے۔
 
| valign="top" | کریلے کو چھیل کاٹ کر اور اس کی آنکھوں میں سے بیج نکال کر نمک ملو اور کچھ دیر ہوا میں رکھ دو۔
16. چھایا، سایا، آسیب، خیالی یا وہمی صورت (عموماً پر کے ساتھ مستعمل)۔
|-
 
| valign="top" | لہسن کا جوا۔
(فرہنگ آصفیہ، 254:1)
| valign="top" | بڑی آنکھ کا لہسن چھانٹ کر لانا۔
 
|-
17. حلقہ، جیسے زنجیر کی آنکھ، رزہ کی آنکھ وغیرہ (اکثر مضاف الیہ کے ساتھ مستعمل)۔
! scope="row" valign="top" | 13
 
| valign="top" | تخمینہ، اندازہ
؎ وہ تیغ تیز آبینہ پیکر پری نژاد
| valign="top" | {{شعر
 
| لیا نہ دل مرا اک بوسے پر وہ یوں بولا
قبضے کی آنکھ، فون کی سورت پہ حق کا صاد [15]
| ہماری آنکھ میں اتنے کا تو یہ مال نہیں }} {{حوالہ
 
| نام=r13 | عنوان=مصحفی، دیوان (ق) |تاریخ =1824ء |صفحہ=178 }}
حرف کے دائرے کی صورت حال یا گول کشش۔
|-
 
! scope="row" valign="top" | 14
؎ وہ دائروں کی آنکھ نہیں وہ نظر نہیں
| valign="top" | اولاد، بیٹا بیٹی وغیرہ۔
 
| valign="top" | "مجھے دونوں آنکھیں برابر ہیں جو بڑی کو دوں گی وہی چھوٹی کو دوں گی۔" {{حوالہ
فعلوں کا ہے یہ حال کہ اک حال پر نہیں [16]
| نام=r14 | عنوان= |تاریخ = |صفحہ= }}[14]
 
|-
18. پتلی۔
! scope="row" valign="top" | 15
 
| valign="top" | گھٹنے کے دونوں طرف کا گھڑا۔
"میری داہنی آنکھ میں پانی اتر آیا ہے۔" [17]
| valign="top" | (امیر اللغات، 21:1)
 
|-
19. خوردبین وغیرہ کا شیشہ، عدسہ، لینس۔
! scope="row" valign="top" | 16
 
| valign="top" | چھایا، سایا، آسیب، خیالی یا وہمی صورت (عموماً پر کے ساتھ مستعمل)۔
"خوردبین کی آنکھ کے نیچے رکھ کر دیکھ سکتی ہے۔" [18]
| valign="top" | (فرہنگ آصفیہ، 254:1)
 
|-
سگنل۔
! scope="row" valign="top" rowspan="2" | 17
 
| valign="top" | حلقہ، جیسے زنجیر کی آنکھ، رزہ کی آنکھ وغیرہ (اکثر مضاف الیہ کے ساتھ مستعمل)۔
"مسافر کے لیے لازم ہے کہ سفر کے آداب سے واقف ہو، ایک خاص شریفانہ رفتار سے تجاوز نہ کرے، سرخ آنکھ نظر آئے تو رک جائے، سبز آنکھ نمودار ہو تو چل پڑے۔" [19]
| valign="top" | {{شعر
 
| وہ تیغ تیز آبینہ پیکر پری نژاد
20. مدار کا پودا، آک کا درخت۔
| قبضے کی آنکھ، فون کی سورت پہ حق کا صاد }} {{حوالہ
 
| نام=r15 | عنوان= |تاریخ = |صفحہ= }}[15]
"جنگل میں ایک درخت ہوتا ہے جس کو آنکھ یا آک کہتے ہیں، اس کے پھول بالکل آنکھوں کی شکل کے ہوتے ہیں۔" [20]
|-
| valign="top" | حرف کے دائرے کی صورت حال یا گول کشش۔
| valign="top" | {{شعر
| وہ دائروں کی آنکھ نہیں وہ نظر نہیں
| فعلوں کا ہے یہ حال کہ اک حال پر نہیں }} {{حوالہ
| نام=r16 | عنوان= |تاریخ = |صفحہ= }}[16]
|-
! scope="row" valign="top" | 18
| valign="top" | پتلی۔
| valign="top" | "میری داہنی آنکھ میں پانی اتر آیا ہے۔" {{حوالہ
| نام=r17 | عنوان= |تاریخ = |صفحہ= }}[17]
|-
! scope="row" valign="top" | 19
| valign="top" | خوردبین وغیرہ کا شیشہ، عدسہ، لینس۔
| valign="top" | "خوردبین کی آنکھ کے نیچے رکھ کر دیکھ سکتی ہے۔" {{حوالہ
| نام=r18 | عنوان= |تاریخ = |صفحہ= }}[18]
|-
! scope="row" valign="top" | 20
| valign="top" | سگنل۔
| valign="top" | "مسافر کے لیے لازم ہے کہ سفر کے آداب سے واقف ہو، ایک خاص شریفانہ رفتار سے تجاوز نہ کرے، سرخ آنکھ نظر آئے تو رک جائے، سبز آنکھ نمودار ہو تو چل پڑے۔" {{حوالہ
| نام=r19 | مصنف=وزیر آغا | عنوان=ماہنامہ الشجاع | شہر=کراچی |تاریخ =1975ء |صفحہ=39 }}
|-
! scope="row" valign="top" | 21
| valign="top" | مدار کا پودا، آک کا درخت۔
| valign="top" | "جنگل میں ایک درخت ہوتا ہے جس کو آنکھ یا آک کہتے ہیں، اس کے پھول بالکل آنکھوں کی شکل کے ہوتے ہیں۔" {{حوالہ
| نام=r20 | کتاب=حسن نظامی | عنوان=پھول |تاریخ =1955ء |صفحہ=24 }}
|-
|}
 
==متغیّرات==
 
چور اور گرہ کٹ بھی شکاری ہے آنکھ بچی اور مال یاروں کا یہی حال جعل ساز، دغاباز، عیار، مکار اور چار سو بیس قسم کے لوگوں کا ہے۔" [102]
== رومن ==
 
== رومن ==
aankh
 
== تراجم ==
 
 
انگریزی : eye
==حوالہ جات==
<div class="column-count column-count-4" style="-moz-column-count: 4; -webkit-column-count: 4; column-count: 4;">
<references />
</div>
1 ^ ( 1921ء، ضیائے سخن، 64 )
 
2 ^ ( 1878ء، گلزار داغ، 184 )
 
3 ^ ( 1895ء، فرہنگ آصفیہ، 253:1 )
 
4 ^ ( 1963ء، مراثی نسیم، 11:3 )
 
5 ^ ( 1956ء، اختر (سجاد علی خاں)، مسدس، 8 )
 
6 ^ ( 1925ء، جاوید (سید محمد کاظم)، مرثیہ، 11 )
 
7 ^ ( 1965ء، منظور رائے پوری، مرثیہ، 7 )
 
8 ^ ( 1944ء، افسانچے، کیفی، 136 )
 
9 ^ ( 1924ء، مکتوبات شاد عظیم آبادی، 191 )
 
10 ^ ( 1936ء، غزل کوکب، ماہنامہ، مسافر، مراد آباد، جنوری، 27 )
 
11 ^ ( 1881ء، مسیو، امیراللغات، 210:1 )
 
12 ^ ( 1903ء، باغبان، 19 )
 
13 ^ ( 1824ء، مصحفی، دیوان (ق)، 178 )
 
14 ^ ( 1895ء، فرہنگ آصفیہ، 153:1 )
 
15 ^ ( 1962ء، 62ء کے چند جدید مرثیے، 78 )
 
16 ^ ( 1912ء، شمیم، ریاض شمیم، 131:7 )
 
17 ^ ( 1913ء، مکاتیب حالی، 77 )
 
18 ^ ( 1969ء، نفسیات اور ہماری زندگی، 17 )
 
19 ^ ( 1975ء، وزیر آغا، ماہنامہ، الشجاع، سالنامہ، کراچی، 39 )
 
20 ^ ( 1955ء، حسن نظامی، پھول، 24 )
 
21 ^ ( 1970ء، مرثیہ فیض بھرتپوری، 9 )
 
22 ^ ( 1919ء، مرثیہ بزم اکبر آبادی، 13 )
 
23 ^ ( 1911ء، تسلیم (امیر اللغات، 228:1) )
 
24 ^ ( 1937ء، قصائد نسیم، 117 )
 
25 ^ ( 1932ء، نقوش مانی، 17 )
 
26 ^ ( 1888ء، صنم خانہ عشق، 268 )
 
27 ^ ( 1929ء، مرثیہ رفیع (مرزا طاہر)، 12 )
 
28 ^ ( 1903ء، نظم نگاریں، جلال، 6 )
 
29 ^ ( 1942ء، اسرار، 72 )
 
30 ^ ( 1905ء، یادگار داغ، 200 )
 
31 ^ ( 1903ء، نظم نگاریں، جلال، 99 )
 
32 ^ ( 1932ء، نقوش مانی، 104 )
 
33 ^ ( 1920ء، روح ادب، 86 )
 
34 ^ ( 1912ء، شمیم، مرثیہ، 17 )
 
35 ^ ( 1936ء، راشدالخیری، زیور اسلام، 12 )
 
36 ^ ( 1926ء، شرر دلچسپ، 19:1 )
 
37 ^ ( 1912ء، شمیم، مرثیہ، 18 )
 
38 ^ ( 1910ء، آپ بیتی، 105 )
 
39 ^ ( 1903ء، سرشار، خدائی فوجدار، 93:1 )
 
40 ^ ( 1924ء، نوراللغات، 157:1 )
 
41 ^ ( 1934ء، بے نظیر شاہ، کلام بے نظیر، 231 )
 
42 ^ ( 1956ء، بیگمات اودھ، 26 )
 
43 ^ ( 1927ء، شادعظیم آبادی، رباعیات، 77 )
 
45 ^ ( 1915ء، جان سخن، 193 )
 
46 ^ ( 1869ء، شیفتہ، کلیات، 122 )
 
47 ^ ( 1910ء، لڑکیوں کی انشا، راشدالخیری، 51 )
 
48 ^ ( 1912ء، شمیم، مرثیہ، 19 )
 
49 ^ ( 1941ء، فانی، کلیات، 210 )
 
50 ^ ( 1972ء، مرثیہ یاور اعظمی، 2 )
 
51 ^ ( 1924ء، خونی راز، مرزا رسوا، 82 )
 
52 ^ ( 1941ء، فانی، کلیات، 191 )
 
53 ^ ( 1938ء، مرثیہ رائق، 9 )
 
54 ^ ( 1921ء، واسوخت شبیر خان، 13 )
 
55 ^ ( 1810ء، میر، کلیات، 369 )
 
56 ^ ( 1891ء، امیراللغات، 216:1 )
 
57 ^ ( 1929ء، مطلع انوار، 156 )
 
58 ^ ( 1854ء، دیوان اسیر، گلستان سخن، 445 )
 
59 ^ ( 1938ء، سریلی بانسری، 11 )
 
60 ^ ( 1914ء، حالی، کلیات نظم حالی، 118:2 )
 
61 ^ ( 1938ء، سریلی بانسری، آرزو، 84 )
 
62 ^ ( 1934ء، مرثیہ رفیع (مرزا طاہر)، 5 )
 
63 ^ ( 1946ء، تعلیمی خطبات، (ڈاکٹر ذاکر حسین)، 206 )
 
64 ^ ( 1932ء، اخوان الشیاطین، 310 )
 
65 ^ ( 1891ء، امیراللغات، 212:1 )
 
66 ^ ( 1972ء، عزم جونپوری، ذکر وفا، 15 )
 
67 ^ ( 1943ء، دلی کی چند عجیب ہستیاں، 147 )
 
68 ^ ( 1861ء، کلیات اختر (واجد علی شاہ)، 836 )
 
69 ^ ( 1903ء، غزلیات جوہر (مجاہد حسین)، 97 )
 
70 ^ ( 1880ء، قلق (امیراللغات، 211:1) )
 
71 ^ ( 1939ء، جلیل (فرزند حسن)، مرثیہ، 21 )
 
72 ^ ( 1934ء، مرثیہ فہیم (باقر علی خاں)، 4 )
 
73 ^ ( 1912ء، شمیم، مرثیہ، 19 )
 
74 ^ ( 1917ء، یزید نامہ، حسن نظامی، 61 )
 
75 ^ ( 1935ء، عیاں، دیواں، 161 )
 
76 ^ ( 1903ء، ترجمہ قرآن، نذیر، 892 )
 
77 ^ ( 1908ء، صبح زندگی، 6 )
 
78 ^ ( 1936ء، پریم چند، واردات، 15 )
 
79 ^ ( 1912ء، شمیم، مرثیہ، 11 )
 
80 ^ ( 1927ء، آیات وجدانی، 93 )
 
81 ^ ( 1965ء، منظور رائے پوری، مرثیہ، 5 )
 
82 ^ ( 1974ء، رواں واسطی، مرثیہ، 11 )
 
83 ^ ( 1927ث، شاد عظیم آبادی، مراثی، 64:2 )
 
84 ^ ( 1937ء، قصیدہ محشر لکھنوی، 6 )
 
85 ^ ( 1965ء، منظور رائے پوری، مرثیہ، 3 )
 
86 ^ ( 1936ء، جگ بیتی، 57 )
 
87 ^ ( 1886ء، دیوان سخن، 55 )
 
88 ^ ( 1924ء، نوراللغات، 161:1 )
 
89 ^ ( 1801ء، طوطا کہانی، 49 )
 
90 ^ ( 1949ء، سلام قیصر، 23 )
 
91 ^ ( 1916ء، مرثیہ فہیم(باقر علی خاں)، 7 )
 
92 ^ ( 1969ء، مرثیہ یاور اعظمی، 11 )
 
93 ^ ( 1921ء، اکبر، کلیات، 88:1 )
 
94 ^ ( 1924ء، نوراللغات، 159:1 )
 
95 ^ ( 1918ء، امین کا دم واپسیں، 7 )
 
96 ^ ( 1912ء، شمیم، مرثیہ، 6 )
 
97 ^ ( 1911ء، تسلیم، نظم ارجمند، 165 )
 
98 ^ ( 1924ء، اختری بیگم، 66 )
 
99 ^ ( 1926ء، معروف، دیوان، 54 )
 
100 ^ ( 1935ء، دودھ کی قیمت، 148 )
 
101 ^ ( 1924ء، نوراللغات، 152:1 )
 
102 ^ ( 1912ء، شہید مغرب، 42 )
 
1103 ^ ( 1921ء،1958ء، ضیائےعمر سخن،رفتہ، 64225 )
2 ^ ( 1878ء، گلزار داغ، 184 )
3 ^ ( 1895ء، فرہنگ آصفیہ، 253:1 )
4 ^ ( 1963ء، مراثی نسیم، 11:3 )
5 ^ ( 1956ء، اختر (سجاد علی خاں)، مسدس، 8 )
6 ^ ( 1925ء، جاوید (سید محمد کاظم)، مرثیہ، 11 )
7 ^ ( 1965ء، منظور رائے پوری، مرثیہ، 7 )
8 ^ ( 1944ء، افسانچے، کیفی، 136 )
9 ^ ( 1924ء، مکتوبات شاد عظیم آبادی، 191 )
10 ^ ( 1936ء، غزل کوکب، ماہنامہ، مسافر، مراد آباد، جنوری، 27 )
11 ^ ( 1881ء، مسیو، امیراللغات، 210:1 )
12 ^ ( 1903ء، باغبان، 19 )
13 ^ ( 1824ء، مصحفی، دیوان (ق)، 178 )
14 ^ ( 1895ء، فرہنگ آصفیہ، 153:1 )
15 ^ ( 1962ء، 62ء کے چند جدید مرثیے، 78 )
16 ^ ( 1912ء، شمیم، ریاض شمیم، 131:7 )
17 ^ ( 1913ء، مکاتیب حالی، 77 )
18 ^ ( 1969ء، نفسیات اور ہماری زندگی، 17 )
19 ^ ( 1975ء، وزیر آغا، ماہنامہ، الشجاع، سالنامہ، کراچی، 39 )
20 ^ ( 1955ء، حسن نظامی، پھول، 24 )
21 ^ ( 1970ء، مرثیہ فیض بھرتپوری، 9 )
22 ^ ( 1919ء، مرثیہ بزم اکبر آبادی، 13 )
23 ^ ( 1911ء، تسلیم (امیر اللغات، 228:1) )
24 ^ ( 1937ء، قصائد نسیم، 117 )
25 ^ ( 1932ء، نقوش مانی، 17 )
26 ^ ( 1888ء، صنم خانہ عشق، 268 )
27 ^ ( 1929ء، مرثیہ رفیع (مرزا طاہر)، 12 )
28 ^ ( 1903ء، نظم نگاریں، جلال، 6 )
29 ^ ( 1942ء، اسرار، 72 )
30 ^ ( 1905ء، یادگار داغ، 200 )
31 ^ ( 1903ء، نظم نگاریں، جلال، 99 )
32 ^ ( 1932ء، نقوش مانی، 104 )
33 ^ ( 1920ء، روح ادب، 86 )
34 ^ ( 1912ء، شمیم، مرثیہ، 17 )
35 ^ ( 1936ء، راشدالخیری، زیور اسلام، 12 )
36 ^ ( 1926ء، شرر دلچسپ، 19:1 )
37 ^ ( 1912ء، شمیم، مرثیہ، 18 )
38 ^ ( 1910ء، آپ بیتی، 105 )
39 ^ ( 1903ء، سرشار، خدائی فوجدار، 93:1 )
40 ^ ( 1924ء، نوراللغات، 157:1 )
41 ^ ( 1934ء، بے نظیر شاہ، کلام بے نظیر، 231 )
42 ^ ( 1956ء، بیگمات اودھ، 26 )
43 ^ ( 1927ء، شادعظیم آبادی، رباعیات، 77 )
45 ^ ( 1915ء، جان سخن، 193 )
46 ^ ( 1869ء، شیفتہ، کلیات، 122 )
47 ^ ( 1910ء، لڑکیوں کی انشا، راشدالخیری، 51 )
48 ^ ( 1912ء، شمیم، مرثیہ، 19 )
49 ^ ( 1941ء، فانی، کلیات، 210 )
50 ^ ( 1972ء، مرثیہ یاور اعظمی، 2 )
51 ^ ( 1924ء، خونی راز، مرزا رسوا، 82 )
52 ^ ( 1941ء، فانی، کلیات، 191 )
53 ^ ( 1938ء، مرثیہ رائق، 9 )
54 ^ ( 1921ء، واسوخت شبیر خان، 13 )
55 ^ ( 1810ء، میر، کلیات، 369 )
56 ^ ( 1891ء، امیراللغات، 216:1 )
57 ^ ( 1929ء، مطلع انوار، 156 )
58 ^ ( 1854ء، دیوان اسیر، گلستان سخن، 445 )
59 ^ ( 1938ء، سریلی بانسری، 11 )
60 ^ ( 1914ء، حالی، کلیات نظم حالی، 118:2 )
61 ^ ( 1938ء، سریلی بانسری، آرزو، 84 )
62 ^ ( 1934ء، مرثیہ رفیع (مرزا طاہر)، 5 )
63 ^ ( 1946ء، تعلیمی خطبات، (ڈاکٹر ذاکر حسین)، 206 )
64 ^ ( 1932ء، اخوان الشیاطین، 310 )
65 ^ ( 1891ء، امیراللغات، 212:1 )
66 ^ ( 1972ء، عزم جونپوری، ذکر وفا، 15 )
67 ^ ( 1943ء، دلی کی چند عجیب ہستیاں، 147 )
68 ^ ( 1861ء، کلیات اختر (واجد علی شاہ)، 836 )
69 ^ ( 1903ء، غزلیات جوہر (مجاہد حسین)، 97 )
70 ^ ( 1880ء، قلق (امیراللغات، 211:1) )
71 ^ ( 1939ء، جلیل (فرزند حسن)، مرثیہ، 21 )
72 ^ ( 1934ء، مرثیہ فہیم (باقر علی خاں)، 4 )
73 ^ ( 1912ء، شمیم، مرثیہ، 19 )
74 ^ ( 1917ء، یزید نامہ، حسن نظامی، 61 )
75 ^ ( 1935ء، عیاں، دیواں، 161 )
76 ^ ( 1903ء، ترجمہ قرآن، نذیر، 892 )
77 ^ ( 1908ء، صبح زندگی، 6 )
78 ^ ( 1936ء، پریم چند، واردات، 15 )
79 ^ ( 1912ء، شمیم، مرثیہ، 11 )
80 ^ ( 1927ء، آیات وجدانی، 93 )
81 ^ ( 1965ء، منظور رائے پوری، مرثیہ، 5 )
82 ^ ( 1974ء، رواں واسطی، مرثیہ، 11 )
83 ^ ( 1927ث، شاد عظیم آبادی، مراثی، 64:2 )
84 ^ ( 1937ء، قصیدہ محشر لکھنوی، 6 )
85 ^ ( 1965ء، منظور رائے پوری، مرثیہ، 3 )
86 ^ ( 1936ء، جگ بیتی، 57 )
87 ^ ( 1886ء، دیوان سخن، 55 )
88 ^ ( 1924ء، نوراللغات، 161:1 )
89 ^ ( 1801ء، طوطا کہانی، 49 )
90 ^ ( 1949ء، سلام قیصر، 23 )
91 ^ ( 1916ء، مرثیہ فہیم(باقر علی خاں)، 7 )
92 ^ ( 1969ء، مرثیہ یاور اعظمی، 11 )
93 ^ ( 1921ء، اکبر، کلیات، 88:1 )
94 ^ ( 1924ء، نوراللغات، 159:1 )
95 ^ ( 1918ء، امین کا دم واپسیں، 7 )
96 ^ ( 1912ء، شمیم، مرثیہ، 6 )
97 ^ ( 1911ء، تسلیم، نظم ارجمند، 165 )
98 ^ ( 1924ء، اختری بیگم، 66 )
99 ^ ( 1926ء، معروف، دیوان، 54 )
100 ^ ( 1935ء، دودھ کی قیمت، 148 )
101 ^ ( 1924ء، نوراللغات، 152:1 )
102 ^ ( 1912ء، شہید مغرب، 42 )
103 ^ ( 1958ء، عمر رفتہ، 225 )
 
[[Category:آ۔ن]]
33

ترامیم

فہرست رہنمائی